Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - نمازِ باجماعت میں شامل ہونے کا طریقہ کیا ہے؟

نمازِ باجماعت میں شامل ہونے کا طریقہ کیا ہے؟

موضوع: نماز با جماعت   |  با جماعت نماز کے احکام

سوال پوچھنے والے کا نام: سیدفاروق عارف       مقام: پشاور

سوال نمبر 3593:
جماعت میں شامل ہونے کا کیا طریقہ ہے؟ اگر امام رکوع وغیرہ میں ہو تو تکبیر کے بعد ہاتھ باندھنا شرط ہے یا براہ راست امام کی اتباع کی جائے گی؟

جواب:

جماعت کے ساتھ شامل ہونے کا طریقہ یہ ہے کہ اگر امام قیام میں ہے تو مَسْبُوق (جس شخص سے امام کی نماز کی کچھ رکعتیں رہ گئی ہوں، اور وہ بعد کی رکعتوں میں امام کے ساتھ شریک ہوا ہو اس کو ”مَسْبُوق“ کہتے ہیں) تکبیرِ تحریمہ کہہ کر ساتھ کھڑا ہوجائے اور اگر امام رکوع، سجدہ یا تشہد میں ہے تو تکبیرِ تحریمہ کے بعد تکبیرِانتقال کہے اور اسی حالت میں چلا جائے جس میں امام ہو۔

اگر امام رکوع کی حالت میں ہو تو مَسْبُوق تکبیر تحریمہ کہہ کر تکبیرِانتقال کہتا ہوا رکوع میں چلا جائے، اس کے لیے ہاتھ باندھنا شرط نہیں ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2015-04-28


Your Comments