Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیابلوغت سے پہلے کیےگئے گناہوں‌ پر توبہ لازم ہے؟

کیابلوغت سے پہلے کیےگئے گناہوں‌ پر توبہ لازم ہے؟

موضوع: احکام بلوغت

سوال پوچھنے والے کا نام: سیدمحمدطاہر       مقام: پاکستان

سوال نمبر 3587:
السلام علیکم! کیا نابالغی کی عمرمیں انسان سے جوگناہ صغیرہ و کبیرہ سرزد ہوتے ہیں کیاوہ نامہ اعمال میں لکھےجاتے ہیں؟ اورکیا ان گناہوں کی توبہ بھی لازم ہے؟جزاک اللہ

جواب:

انسان کے بلوغت کی عمر تک پہنچنے سے پہلے کیے گئے گناہ اعمال نامے میں لکھے جاتے ہیں، اور ان کی توبہ بھی لازم ہے۔ تاہم نابالغ پر حدود لاگو نہیں ہوتیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2015-04-29


Your Comments