Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا دورانِ اعتکاف (بوجہ گرمی) غسل کیا جا سکتا ہے؟

کیا دورانِ اعتکاف (بوجہ گرمی) غسل کیا جا سکتا ہے؟

موضوع: اعتکاف   |  مسائل اعتکاف   |  طہارت   |  غسل

سوال پوچھنے والے کا نام: نصر اللہ خاں       مقام: رتی ٹبی صفدرآباد, شیخوپورہ

سوال نمبر 3132:
السلام علیکم ! کیا رمضان میں اعتکاف کے دوران (بوجہ گرمی) غسل کیا جا سکتا ہے؟

جواب:

دروان اعتکاف، اعتکاف گاہ کےاندر یا قریب ترمقام پر غسل کرنے کی سہولت موجود ہو تو غسل کر سکتے ہیں خواہ واجب نہ بھی ہو۔ کیونکہ کہ گرمیوں میں دس دن بغیر غسل کئے رہنا بہت مشکل ہو جاتا ہے، خاص طور پر جہاں زیادہ لوگ اعتکاف کر رہے ہوں وہاں پر گرمی زیادہ ہوتی ہے اور پسینہ بھی زیادہ آتا ہے۔ بہتر صورت یہی ہے کہ غسل کر لیا جائے تاکہ زیادہ سے زیادہ صفائی ممکن ہو سکے اور پسینے کی ناخوشگوار بو نہ آئے۔ لہذا دورانِ اعتکاف غسل کر سکتے ہیں، اس میں کوئی ممانعت نہیں ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2016-04-09


Your Comments