Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا سونا بھی ترکہ میں‌ شمار کیا جاتا ہے؟

کیا سونا بھی ترکہ میں‌ شمار کیا جاتا ہے؟

موضوع: وراثت کی تقسیم

سوال پوچھنے والے کا نام: ارسلان احمد       مقام: راولپنڈی، پاکستان

سوال نمبر 3049:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ والد کی وفات کے بعد اس کی چھوڑی ہوئی دولت یا زمین ترکہ میں‌ آتی ہے۔ اسی طرح‌ والدہ کی بیچی ہوئی جائیداد جیسے سونا وغیرہ بھی ترکہ کے طور پر تقسیم ہو گا۔

جواب:

مرنے والے کی ملکیت میں ہر چیز مثلا سونا، چاندی، زمین اور مال ودولت وغیرہ ورثاء میں تقسیم کی جائے گی۔ لیکن سب سے پہلے اس کے کفن دفن پر اٹھنے والے اخراجات ادا کرنے کے بعد قرض ادا کیا جائے گا اگر اس کے ذمہ ہو، پھر وصیت اگر ہو تو 1/3 سے پوری کرنے کے بعد ورثاء میں تقسیم کریں گے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2014-01-30


Your Comments