نماز جنازہ میں سجدہ کیوں‌ نہیں‌ ہے؟

سوال نمبر:2900
السلام علیکم میرا سوال ہے کہ نماز جنازہ میں سجدہ کیوں نہیں ہے؟

  • سائل: محبتی مورزادو گورشانیمقام: جیکب آباد پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 16 نومبر 2013ء

زمرہ: عبادات  |  نماز  |  نماز جنازہ

جواب:

اصل میں یہاں صلوۃ بمعنی نماز نہیں ہے، بلکہ بمعنی دعائے مغفرت ہے۔ اس لیے اس میں سورۃ فاتحہ، سورت ملانا، رکوع، سجدہ، جلسہ اور قعدہ وغیرہ نہیں ہیں۔

قرآن پاک میں ہے:

وَلاَ تُصَلِّ عَلَى أَحَدٍ مِّنْهُم مَّاتَ أَبَدًا وَلاَ تَقُمْ عَلَىَ قَبْرِه إِنَّهُمْ كَفَرُواْ بِاللّهِ وَرَسُولِهِ وَمَاتُواْ وَهُمْ فَاسِقُونَo

اور آپ کبھی بھی ان (منافقوں) میں سے جو کوئی مر جائے اس (کے جنازے) پر نماز نہ پڑھیں اور نہ ہی آپ اس کی قبر پر کھڑے ہوں (کیونکہ آپ کا کسی جگہ قدم رکھنا بھی رحمت و برکت کا باعث ہوتا ہے اور یہ آپ کی رحمت و برکت کے حق دار نہیں ہیں)۔ بیشک انہوں نے اللہ اور اس کے رسول (صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم) کے ساتھ کفر کیا اور وہ نافرمان ہونے کی حالت میں ہی مر گئےo

التوبہ، 9 : 84

دوسرے مقام پر ارشاد باری تعالی ہے:

خُذْ مِنْ أَمْوَالِهِمْ صَدَقَةً تُطَهِّرُهُمْ وَتُزَكِّيهِم بِهَا وَصَلِّ عَلَيْهِمْ إِنَّ صَلاَتَكَ سَكَنٌ لَّهُمْ وَاللّهُ سَمِيعٌ عَلِيمٌo

آپ ان کے اموال میں سے صدقہ (زکوٰۃ) وصول کیجئے کہ آپ اس (صدقہ) کے باعث انہیں (گناہوں سے) پاک فرما دیں اور انہیں (ایمان و مال کی پاکیزگی سے) برکت بخش دیں اور ان کے حق میں دعا فرمائیں، بیشک آپ کی دعا ان کے لئے (باعثِ) تسکین ہے، اور اﷲ خوب سننے والا خوب جاننے والا ہےo

التوبہ، 9 : 103

مذکورہ بالا آیات میں صلوۃ بمعنی نماز نہیں ہے۔ لہذا نماز جنازہ سے مراد دعائے مغفرت ہے۔ اس لیے اس میں سجدہ نہیں ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟