Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - دوران عدت شادی کیوں جائز نہیں ہے؟

دوران عدت شادی کیوں جائز نہیں ہے؟

موضوع: نکاح   |  عدت کے احکام

سوال پوچھنے والے کا نام: ظفر اقبال       مقام: بارسلونا

سوال نمبر 2882:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ دوران عدت شادی کیوں جائز نہیں؟ اگر مجبوری کے تحت عورت شادی کر لے تو کیا حکم ہے؟

جواب:

عدت پوری کرنا اس لیے ضروری ہوتی ہے کہ معلوم ہو جائے عورت حاملہ ہے کہ نہیں یعنی رحم کا خالی ہونا معلوم ہو جائے۔ اگر عدت پوری نہ کی جائے تو معلوم نہیں ہو گا حمل پہلے شوہر کا ہے یا دوسرے کا، پیدا ہونے والا بچہ متنازعہ ہو سکتا ہے۔ اس لیے دوران عدت شادی کرنا جائز نہیں ہے۔

کسی بھی صورت میں اگر عورت دوران عدت کسی دوسرے شخص سے نکاح کر لے تو نکاح منعقد نہیں ہو گا۔ طلاق بائن کی صورت جس میں دوبارہ نکاح ممکن ہو عدت کے اندر ہی پہلے شوہر سے نکاح ہو سکتا ہے یا پھر رخصتی یا خلوت صحیحہ سے پہلے طلاق ہو جانے کی صورت میں عدت نہیں ہو گی۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-10-14


Your Comments