جواہرات کو پتھر میں تبدیل کر دینے سے کیا زکوۃ واجب الادا ہو گی؟

سوال نمبر:2866
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ کیا کوئی عورت اپنے سونے اور چاندی کے زیورات کو ہیرہ موتی جواہرات یعنی پتھر میں تبدیل کر دے تو کیا اس پر بھی اس کو زکوۃ واجب الادا ہے؟

  • سائل: احترام احمد قریشیمقام: بھوپال
  • تاریخ اشاعت: 16 نومبر 2013ء

زمرہ: زکوۃ

جواب:

2۔ ہیرے، موتی اور جواہرات اگر استعمال میں ہوں تو ان پر زکوۃ لاگو نہیں ہو گی۔ اگر ضروریات اصلیہ سے اضافی ہوں یا مال تجارت کے لیے ہوں تو ان پر زکوۃ ہو گی۔ لہذا جو ہیرے، موتی اور جواہرات عورت کے استعمال میں ہوں ان پر زکوۃ نہیں ہو گی۔

مزید مطالعہ کے لیے یہاں کلک کریں
ہیروں پر زکوۃ کیوں نہیں ہوتی ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟