Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا عورتیں مخصوص پروگرام میں‌ ہاف بازو والے کپڑے پہن سکتی ہے؟

کیا عورتیں مخصوص پروگرام میں‌ ہاف بازو والے کپڑے پہن سکتی ہے؟

موضوع: لباس

سوال پوچھنے والے کا نام: یاسین ملک       مقام: لنڈی کوتل، پشاور

سوال نمبر 2829:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ رسم مہندی، شادی، سالگرہ جیسے دیگر تقاریب میں عورتیں ہاف بازو والے کپڑے پہن سکتی ہے؟ (صرف اس پروگرام کی خاطر۔۔۔۔ کیونکہ تمام عورتوں کے لباس کا ڈیزائن ایک ہے)

جواب:

جتنا عورت کا ستر ہے اس کو چھپانا ہر جگہ لازمی ہے خواہ عورتوں کی محفل ہو یا مردوں کی۔ اس لیے جو لباس عام دنوں میں جائز نہیں، وہ شادی بیاہ کے مواقع پر بھی جائز نہیں ہے۔ ایسا باریک اور تنگ لباس جس میں اعضاء واضح ہوں، وہ جائز نہیں ہے۔ مقصد پردہ پوشی ہوتا ہے، اگر لباس پہن کر بھی جسم ننگا رہے تو ایسا لباس جائز نہیں ہے۔ اس سے عورت کی عزت ہی نہیں ہے بلکہ اس کا وقار بھی کم ہوتا ہے۔ معلوم نہیں کچھ عورتیں اپنے آپ کو اتنا سستا کیوں کرنا چاہتی ہیں؟ اسلام تو عورت کا وقار بلند کرتا ہے۔ یہ میری سوچ سے بالا ہے کہ مسلمان ہو کر بھی مغرب کی اندھی تقلید کرتی ہوئی عورت یہ کیوں نہیں سوچتی کہ وہ اپنی عزت بازار کے لونڈوں کی نظر کیوں کر رہی ہے؟ وہ اپنے آپ کو اتنا نیچا کیوں کرنا چاہتی ہے؟ کیا اسے اپنی قدر وقیمت معلوم نہیں ہے؟ کیا وہ احساس کمتری کا شکار ہو چکی ہے؟ لہذا اسلام عورت کو آزاد اور باوقار دیکھنا چاہتا ہے، اس لیے باپردہ عورت ہی باعزت زندگی گزار سکتی ہے اور ظاہر کا اثر باطن پر بھی ہونا ضروری ہے۔

مزید وضاحت کے لیے یہاں کلک کریں
کس طرح کا عبایا/جبہ پہننا صحیح ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-09-23


Your Comments