Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا شادی شدہ عورت کو حصول علم کے لیے شوہر سے اجازت لینا ضروری ہے؟

کیا شادی شدہ عورت کو حصول علم کے لیے شوہر سے اجازت لینا ضروری ہے؟

موضوع: حقوق العباد   |  معاملات

سوال پوچھنے والے کا نام: فریال منور       مقام: بنگلہ دیش

سوال نمبر 2825:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ میں شادی کے بعد بھی پڑھنا چاہتی ہوں مجھے بہت شوق ہے کہ دینی تعلیم حاصل کروں مگر مجھے سہیلی نے کہا کہ ایسا کر نے سے شوہر کی حق تلفی ہو گی۔

جواب:

پڑھنے کے وقت پڑھیں اور شوہر کے حقوق پورے کرنے کے وقت حقوق پورے کریں، ایک ہی کام میں گم ہو کر نہ رہ جائیں۔ ہر کام کے کرنے کی ایک حد ہوتی ہے اس کے اندر رہتے ہوئے کیا جائے تو کوئی ممانعت نہیں ہے۔ آپ کوئی ایسا بندوبست کریں کہ پڑھنے کے لیے بھی کوئی وقت رکھ لیں، امید ہے شوہر بھی منع نہیں کرے گا۔ ایسی بہت سی مثالیں ہیں کہ لڑکے لڑکیاں شادی کے بعد بھی اپنی تعلیم جاری رکھتے ہیں اور انہیں کوئی مشکل پیش نہیں آتی۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-09-23


Your Comments