Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا تعمیر مسجد کے لیے قربانی کی کھالوں سے جمع رقوم استعمال کی جا سکتی ہیں؟

کیا تعمیر مسجد کے لیے قربانی کی کھالوں سے جمع رقوم استعمال کی جا سکتی ہیں؟

موضوع: مسجد   |  قربانی

سوال پوچھنے والے کا نام: عبدالرزاق       مقام: فیصل آباد پاکستان

سوال نمبر 2769:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ کیا ہم قربانی کی کھالوں سے جمع رقوم کو ایسی مسجد میں استعمال کر سکتے ہیں جہاں مدرسہ تو موجود ہے مگر تعلیمی لحاظ سے فعال نہیں ہے اور جس وجہ سے طلبا کو مسجد میں ناظرہ کی تعلیم دی جاتی ہے اور مسجد زیر تعمیر ہے تو کیا ہم مسجد کی تعمیراتی کاموں میں کھالوں سے جمع رقوم کو استعمال کر سکتے ہیں؟

جواب:

مسجد کی تعمیر میں قربانی کی کھالوں کی رقوم استعمال کر سکتے ہیں، جائز ہے۔ لیکن یہ قابل غور بات ہے کہ مدرسہ تعلیمی لحاظ سے فعال نہیں ہے پھر اس کی مدد سوچ سمجھ کر کرنی چاہیے۔ اس لیے دیکھ لیں کہ فعال نہ ہونے کی وجہ وسائل کی کمی ہے یا تمام تر وسائل موجود ہیں۔ ایسا نہ ہو کہ ان کو تعلیم کی بجائے کرپشن کی نظر کر دیا جائے۔ اگر وجہ وسائل کی کمی ہے تو ضرور اسی مسجد کو دیں، ورنہ کسی حقدار کی مدد کریں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-09-09


Your Comments