Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا صفائی کرنے والے ملازم (مسلم و غیر مسلم) سے ہاتھ ملانے کے بعد دھونے ضروری ہیں؟

کیا صفائی کرنے والے ملازم (مسلم و غیر مسلم) سے ہاتھ ملانے کے بعد دھونے ضروری ہیں؟

موضوع: طہارت

سوال پوچھنے والے کا نام: عبد الھادی       مقام: پاکستان

سوال نمبر 2584:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر کسی شخص کا موبائل جو فلش میں‌ گرنے کے بعد بغیر دھوئے اس نے خشک کر لیا ہو وہ شخص اس موبائل کو استعمال کر رہا ہو تو کیا اس سے ہاتھ ملانے کے بعد ہمیں‌ ہاتھ دھونا لازمی ہے اور کیا صفائی کرنے والے ملازم (مسلم و غیر مسلم) سے ہاتھ ملانے کے بعد دھونے ضروری ہیں؟

جواب:

موبائل فلش میں گر جائے تو اسے نکال کر پیٹرول یا کسی اور ایسی چیز سے صاف کر لینا چاہیے جس سے جراثیم سے پاک ہو جائیں یعنی گندگی کے اثرات ختم ہو جائیں تو وہ پاک ہو جائے گا بہتر طریقہ یہی ہے۔ اگر گندگی وغیرہ نہ لگی ہوئی ہو تو گیلے کپڑے سے تین مرتبہ صاف کر کے دھوپ میں رکھنے سے خشک ہو کر بھی پاک ہو جائے گا۔ جب پاک ہو جائے پھر اس کو استعمال کرنے والے سے ہاتھ ملانے کے بعد ہاتھ دھونے کی ضرورت نہیں ہے۔

صفائی کرنے والا ملازم مسلم ہو یا غیر مسلم اگر اس کے ہاتھ ناپاک ہوں تو اس سے ہاتھ ملانے والے کے بھی ہاتھ ناپاک ہو جائیں گے اور دھونے ضروری ہو جائیں گے۔ مثلا سویپر ٹائلٹ کی صفائی کر رہا ہو تو گندگی کو صاف کرتے وقت اس کے ہاتھ ناپاک ہو جائیں تو اس وقت جو بھی اس سے ہاتھ ملائے گا اس کے لیے ضروری ہے وہ ہاتھ اپنے ہاتھ پاک صاف کرے۔ اگر اس کے بعد سویپر اپنے ہاتھ اچھی طرح صاف پانی سے دھو کر پاک کر لے تو اس کے ہاتھ صاف ہو جائیں گے، اب ایسے شخص سے اگر وہ مسلم ہو یا غیر مسلم اس سے ہاتھ ملانے کے بعد دھونے کی ضرورت نہیں ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-05-20


Your Comments