Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - شادی شدہ عورت کی ذاتی زمین میں‌ سے وراثت کیسے تقسیم ہو گی؟

شادی شدہ عورت کی ذاتی زمین میں‌ سے وراثت کیسے تقسیم ہو گی؟

موضوع: وراثت کی تقسیم

سوال پوچھنے والے کا نام: وقاص اکرم       مقام: عارف والا، پاکستان

سوال نمبر 2492:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ میری خالہ جو میری ساس بھی ہیں‌ فوت ہو چکی ہیں ان کی کچھ ذاتی زمین تھی جو ان کے نام تھی۔ اب ان کے فوت ہونے کے بعد ان کی 2 بیٹیوں کو اور اس میں‌ سے 5 مرلے ان کے 1 نواسے کو دینا کی زبانی وصیت تھی فوت ہونے سے دو دن پہلے۔ اب سوال یہ ہے کہ کیا اس زمین میں سے میری ساس کا کے بھائیوں کو کوئی حصہ جاتا ہے اگر جاتا ہے تو کتنا؟ فوت شدہ کا کسی طرح کا قرض دینا باقی نہیں‌ ہے۔

جواب:

میت کے کفن دفن کے اخراجات نکالنے کے بعد قرض اگر ہو تو ادا کرنے کے بعد وصیت 1/3 میں سے پوری کی جاتی ہے۔ اس لیے نواسے کے لیے کی گئی وصیت ایک تہائی سے پوری کرنے کے بعد جو باقی بچے اس میں سے دو تہائی (2/3) دونوں بیٹوں کو مل جائے گا۔ ان کا والد ہے تو 1/4 اس کو ملے گا باقی اس کے بھائیوں کو مل جائے گا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-03-30


Your Comments