Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا عقیقہ صرف وقت مقررہ پر ہی ہوتا ہے؟

کیا عقیقہ صرف وقت مقررہ پر ہی ہوتا ہے؟

موضوع: مسائل عقیقہ

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد کاشف حسین       مقام: سعودی عرب

سوال نمبر 2486:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ میں‌ نے وقت پر اپنی بیٹی کا عقیقہ نہیں‌ کیا جو کہ سنت رسول ہے۔ کچھ دنوں سے میری بیٹی کی طبیعت ٹھیک نہیں‌ رہتی ہے کبھی کوئی تکلیف تو کبھی کچھ۔ مہربانی کر کے بتائیں‌ کیا میں‌ اب عقیقہ کر سکتا ہوں جبکہ اب اس کی عمر 8 ماہ ہو چکی ہے، الحمد للہ یا پھر میں صدقہ یا خیرات کر دوں۔ جواب قرآن وحدیث کی روشنی میں‌ درکار ہے۔

جواب:

عقیقہ کرنا سنت رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہے اور ساتویں دن کرنا مستحب ہے۔ آپ ابھی بھی کر سکتے ہیں سنت ادا ہو جائے گی۔

مزید مطالعہ کے لیے یہاں کلک کریں
عقیقہ کرنا کتنا ضروری ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2013-03-20


Your Comments