اولاد کو والدین کا حکم کس وقت تک ماننا چاہیے؟

سوال نمبر:2477
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر سسرال والے بہو پر سرے عام تشدد کریں تو اس صورت میں‌ شوہر کو کیا کرنا چاہیے؟ کیا والدین کی غلطی کے باوجود ان کی اطاعت کرے یا اپنی بیوی کو لے کر الگ ہو جائے، جبکہ لڑکے کے والدین کو اپنی غلطی کا احساس بھی نہ ہو تو کیا تب بھی لڑکا اپنے والدین کی اطاعت کرے یا چھوڑ دے؟

  • سائل: منہاج البرکتمقام: نواب شاہ، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 26 مارچ 2013ء

زمرہ: والدین کے حقوق

جواب:

والدین ہوں یا کوئی اور ہو، جب کوئی گناہ کرنے کا حکم دے اس پر عمل نہیں کیا جائے گا۔ اللہ تعالی کسی پر ظلم کرنے کی اجازت نہیں دیتا، اس لیے اگر والدین آپ کو آپ کی بیوی پر ظلم کرنے کو کہیں تو آپ کے لیے ان کی اطاعت کرنا لازمی نہیں ہے۔ ہاں اگر کوئی اچھا کام کرنے کو کہتے ہیں ضرور کریں، لیکن گناہ میں ان کی اطاعت نہ کریں۔ بہتر یہی ہے کہ اپنی بیوی کو ان سے الگ کر دیں، آپ دونوں الگ رہیں، کھائیں پئیں، لیکن آپ اپنے والدین کی خدمت کرنا نہ بھولیں۔ آپ ان کی خدمت جاری رکھیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟