Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - بغیر نکاح حمل ہونے کی صورت میں بچہ جائز ہوگا یا ناجائز؟

بغیر نکاح حمل ہونے کی صورت میں بچہ جائز ہوگا یا ناجائز؟

موضوع: نکاح

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد طارق       مقام: لاہور، پاکستان

سوال نمبر 2331:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر بغیر نکاح کے لڑکا اور لڑکی ہمبستری کر لیں اور تین ماہ بعد لڑکی کو پتا چلے کے وہ حاملہ ہے اور لڑکا اس سے شادی بھی کر لے تو کیا بچہ حلال مانا جائے گا؟ کیونکہ نکاح تو حاملہ ہونے کے بعد ہوا ہے۔

جواب:

نکاح سے پہلے غلط کاری سے ٹھہرے ہوئے حمل سے جو بچہ پیدا ہو گا، وہ حرامی ہو گا، لیکن اس کی کفالت آپ لوگوں کو کرنی چاہیے، کیوں کہ اس میں بچے کا کوئی گناہ نہیں ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2012-12-03


Your Comments