Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - خاوند پر جادو کروانے والی کے بارے میں کیا حکم ہے؟

خاوند پر جادو کروانے والی کے بارے میں کیا حکم ہے؟

موضوع: معاملات  |  جادو

سوال پوچھنے والے کا نام: عمران حنیف       مقام: گجرات، انڈیا

سوال نمبر 2258:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر کوئی عورت (بیوی) اپنے خاوند پر کالا جادو کرے تو اس عورت کے لیے کیا حکم ہے؟ کیا جادو کرنے کا مقصد صرف اور صرف خاوند کو جورو کا غلام بنانا اور ماں باپ سے الگ کرنا ہے؟ اسے نکاح میں‌ رکھے یا طلاق دے دے؟

جواب:

جادو کرنے کے بہت سے مقاصد ہو سکتے ہیں صرف یہ دو ہی نہیں ہیں۔ سب سے پہلے تو آپ کو پوری تحقیق کرنی چاہیے کہ آپ کو اپنی بیوی پر شک وشبہ ہے کہ وہ آپ پر جادو کرتی ہے یا پھر واقعی درست ہے۔ اگر ثابت ہو جائے کہ وہ جادو کرتی ہے تو اس صورت میں آپ اس کو سمجھائیں اور جادو کے اثرات کو ختم کرنے کے لیے وظیفہ کریں۔ محض شک وشبہ کی بنیاد پر اپنے تعلقات خراب نہ کریں۔

مزید مطالعہ کے لیے یہاں کلک کریں
جادو کو ختم کرنے کا طریقہ کیا ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2012-10-15


Your Comments