Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کسی مسلم یا غیر مسلم کو گالی گلوچ کرنا کیسا ہے؟

کسی مسلم یا غیر مسلم کو گالی گلوچ کرنا کیسا ہے؟

موضوع: معاملات  |  سب و شتم

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد مزمل لون       مقام: سیالکوٹ، پاکستان

سوال نمبر 2254:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ کسی مسلم یا غیر مسلم کو گالی گلوچ کرنا اور لعن طعن کرنا کیسا ہے؟ اس کے بارے میں شریعت میں کیا حکم ہے؟ برائے مہربانی مجھے قرآن وحدیث کے حوالا دیا جائے۔

جواب:

مسلم ہو یا غیر مسلم کسی کو بھی گالی گلوچ کرنا یا لعن طعن کرنا اچھا عمل نہیں ہے۔ اللہ تعالی نے اس کو پسند نہیں فرمایا ہاں ایک صورت ہے کہ مظلوم پر جب ظلم ہو رہا ہو تو اس کو اجازت ہے تاکہ ظالم کو مزید ظلم کرنے سے روکا جا سکے قرآن پاک میں ہے :

لاَّ يُحِبُّ اللّهُ الْجَهْرَ بِالسُّوءِ مِنَ الْقَوْلِ إِلاَّ مَن ظُلِمَ وَكَانَ اللّهُ سَمِيعًا عَلِيمًا.

اﷲ کسی (کی) بری بات کا بآوازِ بلند (ظاہراً و علانیۃً) کہنا پسند نہیں فرماتا سوائے اس کے جس پر ظلم ہوا ہو (اسے ظالم کا ظلم آشکار کرنے کی اجازت ہے)، اور اﷲ خوب سننے والا جاننے والا ہےo

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: عبدالقیوم ہزاروی

تاریخ اشاعت: 2012-11-13


Your Comments