Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا حاجی منیٰ کی بجائے کسی دوسرے ملک میں‌ قربانی کر سکتا ہے؟

کیا حاجی منیٰ کی بجائے کسی دوسرے ملک میں‌ قربانی کر سکتا ہے؟

موضوع: قربانی

سوال پوچھنے والے کا نام: ایچ۔ایم۔سعید       مقام: لاہور، پاکستان

سوال نمبر 2226:
السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ جو قربانی حج کے دوران لازمی ہے، کیا ہم منہاج القرآن کی مرکزی اجتماعی قربانی میں اس کا حصہ ڈال سکتے ہیں یا صرف حج کے مقام پر ہی کرنا ضروری ہے؟

جواب:

جو قربانی حج کے دوران کرنا لازمی ہے وہ آپ کو حرمین ہی میں کرنی ہو گی۔ اگر آپ ایک سے زائد قربانیاں کرنا چاہتے ہیں تو پھر ایک حج کے دوران حرمین ہی میں کر لیں دوسری قربانی آپ جس جگہ دینا چاہیں وہ آپ کی مرضی ہے۔اس میں آپ حصہ ڈال لیں یا کسی کو پیسے بھیج دیں وہ آپ کی طرف سے کسی دوسری جگہ قربانی کر سکتا ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2012-10-17


Your Comments