کیا مسلمان کا غیر مسلم سے اعضاء لینا دینا جائز ہے؟

سوال نمبر:2207
السلام وعلیکم میرا سوال یہ ہے کہ کیا کوئی غیر مسلم کسی مسلم کے اعضاء لے سکتا ہے یا مسلم کسی غیر مسلم کے اعضاء لے سکتا ہے؟.. بطور عطیہ دونوں طرف سے.. یا کسی غیر مسلم کے اعضاء معاوضہ سے لے سکتا ہے؟

  • سائل: محمد جاویدمقام: فرانس
  • تاریخ اشاعت: 03 نومبر 2012ء

زمرہ: جدید فقہی مسائل  |  اعضاء کی پیوندکاری

جواب:

مسلمان بھی مسلمان کے اعضاء نہیں لے سکتا۔ ہوتا یوں ہے کہ امیر لوگ غریب لوگوں کو پیسے کا لالچ دے کر ان کے گردے یا جو بھی اعضاء قابل استعمال ہوں لے لیتے ہیں لیکن بعد میں بیماریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔ یہ عطیہ نہیں ہوتا غربت سے فائدہ اٹھایا جاتا ہے۔ یہ تو رشتہ داروں کو چاہیے کے اپنے پیاروں کو اپنے اعضاء عطیہ کریں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟