مسجد کی تعمیر کے بعد قبلہ سمت کو کیسے درست کیا جا سکتا ہے؟

سوال نمبر:2120
محترم مفتی صاحب ! السلام علیکم مسجد کی تعمیر کے بعد جب اس کی قبلہ کی طرف سمت کو چیک کیا گیا تو مختلف ذرائع سے یہ بات معلوم ہوئی کہ اس میں تقریباً 23 ڈگری کا فرق ہے۔ اب قبلہ کی طرف سمت کا درست تعین ہو گیا ہے۔ اس بارے میں راہنمائی فرمائیں کہ جس رخ پر مسجد کی تعمیر ہو چکی ہے اسی طرح رخ رکھیں یا مسجد کو شہید کر کے دوبارہ سے تعمیر کی جائے؟ یا صرف قبلہ سمت کو صفوں کا رخ کر کے نماز ادا کی جاتی رہے؟

  • سائل: اکمل کندانمقام: سرگودھا
  • تاریخ اشاعت: 15 ستمبر 2012ء

زمرہ: مسجد کے احکام و آداب

جواب:

قبلہ کا رخ تعین ہو گیا ہے لہذا آپ کے لیے جو ممکن ہو آسان ہو وہ کر سکتے ہیں۔ اگر مسجد شہید کر کے دوبارہ تعمیر کر سکتے ہوں تو ایسا بھی کر سکتے ہیں ورنہ شہید کرنے کے بجائے جس طرح قبلہ کا رخ متعین ہوا ہے صفیں اس طرف کر لیں اور لکیریں لگا لیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟