کیا تلاوت سیکھنے کی نیت سے کمپیوٹر یا موبائل پر قرآن کی تلاوت لگا کر قاری کے پیچھے پڑھنا جائز ہے؟

سوال نمبر:2089
السلام علیکم کیا تلاوت سیکھنے کی نیت سے کمپیوٹر یا موبائل پر قرآن کی تلاوت لگا کر قاری کے پیچھے پڑھنا جائز ہے؟ مجھے امام کعبہ سدیس کی تلاوت بہت پسند ہے میں بھی چاہتی ہوں کہ مجھے بھی ان کی طرز پر قرآن پڑھنا آ جائے اس غرض سے میں موبائل پر ان کی آواز میں تلاوت لگا کر اس کے پیچھے پیچھے پڑھتی ہوں کیا ایسا کرنا جائز ہے جبکہ اللہ کہتا ہے جب قرآن پڑھا جا رہا ہو تو خاموشی سے سنو کیا یہ حکم یہاں بھی لاگو ہو گا؟

  • سائل: نوشین اطہرمقام: سپین
  • تاریخ اشاعت: 05 ستمبر 2012ء

زمرہ: جدید فقہی مسائل  |  تلاوت‌ قرآن‌ مجید

جواب:

تلاوت سیکھنے کی نیت سے کمپیوٹر یا موبائل پر قرآن مجید کی تلاوت لگا کر قاری کے پیچھے پڑھنا جائز ہے۔ اس میں کوئی حرج نہیں ہے۔ آپ بیک وقت دونوں کام کرتی ہیں سنتی بھی ہیں اور سیکھنے کے لیے پڑھتی بھی ہیں۔ ایسا کرنا جائز ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟