Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا روڈ ایکسیڈینٹ میں فوت ہو جانے والا شہید کہلائے گا؟

کیا روڈ ایکسیڈینٹ میں فوت ہو جانے والا شہید کہلائے گا؟

موضوع: عبادات  |  نماز جمعہ   |  شہید کے احکام

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد شاہد خان       مقام: ملتان، پاکستان

سوال نمبر 2077:
اگر کوئی مسلمان ماہ رمضان میں روڈ ایکسیڈینٹ میں فوت ہو جائے تو کیا وہ شہید ہو گا اور کیا قبر میں اس سے رمضان اور شہادت کی وجہ سے کوئی سوال و جواب نہیں ہونگے؟ اور دوسرا سوال یہ ہے کہ جمعہ کی سنتوں کی نیت کیا ہو گی کیا وہ جمعہ کی ہونگی یا پھر ظہر کی؟

جواب:

  1. اگر کوئی مسلمان ماہ رمضان یا غیر رمضان روڈ ایکسیڈنٹ میں فوت ہو جائے تو وہ شہید ہوتا ہے بشرطیکہ اس کا سفر معاصی کی طرف نہ ہو، ڈاکہ زنی، دہشت گردی، چوری یا کسی بھی غلط مقصد کے لیے نہ ہو۔
  2. اللہ تعالی رمضان شریف میں خصوصی رعایت عنایت فرماتا ہے اور رحمت کا معاملہ کرتا ہے۔
  3. جمعہ کی سنتوں کی نیت میں جمعہ یا ظہر دونوں کی نیت کی جا سکتی ہے۔ لیکن فرض سے پہلے جو سنتیں ادا کی جائیں انہیں اول جمعہ اور بعد میں ادا کی جانے والی سنتوں کی بعد جمعہ کہہ کر نیت کرنی چاہیے۔ لیکن اگر کوئی صرف جمعہ یا ظہر کہتا ہے تب بھی ٹھیک ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-09-06


Your Comments