Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - مشروط طلاق کا شرعی حکم کیا ہے؟

مشروط طلاق کا شرعی حکم کیا ہے؟

موضوع: طلاق   |  اقسام طلاق   |  غیر مدخولہ کی طلاق

سوال پوچھنے والے کا نام: زین العابدین       مقام: انڈیا

سوال نمبر 1825:

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام درجہ ذیل مسائل کے بارے میں:

  1. کسی نے اپنی بیوی سے کہا کہ اگر تو نے مجھے ایس۔ایم۔یس۔کیا تو تجھے طلاق۔ اور اس کی بیوی نے اسے یس۔ایم۔یس۔کیا مگر یس۔ایم۔یس۔فیل ہوگیا۔ آیا اس صورت میں طلاق واقع ہوگی یا نہیں؟
  2. اگر کسی نے اپنی بیوی سے کہا کہ تو نے مس کال کی تو تجھے طلاق اور اس کی بیوی نے اسے کال کی مگر اس نے نہ اُٹھایا تو وہ مس کال ہوگی تو ایسی صورت میں طلاق واقع ہوگی یا نہیں؟
  3. اگر کسی نے اپنی بیوی سے کہا کہ تو نے چشمہ لگایا تو تجھے طلاق۔ اس نے لینس لگایا تو کیا ایسی صورت میں طلاق واقع ہوئی یا نہیں؟
  4. ایسے شوپنگ مال میں جہاں پر سی۔سی۔کیمرے لگے ہوئے ہوں اور دو مرد و عورت کے علاوہ کوئی تیسرا وہاں موجود نہ ہو تو ایسی صورت میں خلوتِ صحیحہ کا تحقق ہوگا یا نہیں؟

جواب:

آپ کے ابتدائی تینوں سوالات کا جواب یہ ہے کہ ان صورتوں میں طلاق واقع ہو گئی ہے۔

آپ کے آخری سوال کا جواب یہ ہے کہ خلوت صحیحہ کا تحقق نہیں ہوگا۔ کیونکہ خلوت صحیحہ نکاح کی صورت میں ہوتی ہے، بغیر نکاح کے نہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-06-26


Your Comments