Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا عورتوں کا اپنے خاوند کے لیے بال کٹوانا جائز ہے؟

کیا عورتوں کا اپنے خاوند کے لیے بال کٹوانا جائز ہے؟

موضوع: جدید فقہی مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: نوشین اختر       مقام: اسپین

سوال نمبر 1798:
کیا عورتوں کا بال کٹوانا جائز ہے؟ اگر نا محرم کے سامنے ننگے سر نہ جائیں. صرف اپنے خاوند اور عورتوں کے سامنے ننگے سر جائیں تو کیا پھر بال کٹوا سکتی ہیں؟

جواب:

عورتوں کا اپنے خاوند کے لیے بال کٹونا، زیب و زیبائش کرنا، زینت اختیار کرنا جائز ہے ، لیکن بال اتنے چھوٹے نہ کروائیں جائیں جس سے مردوں سے مشابہت ہو۔ اسلام میں یہ حرام ہے۔

اس سوال کا تفصیلی جواب گزر چکا ہے، مطالعہ کے لیے یہاں کلک کریں
کیا عورتیں اپنے سر کے بال شوق اور شوہر کی مرضی سے کٹوا سکتی ہیں؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-06-02


Your Comments