کسی انٹرنیٹ کمپنی کے ساتھ ان کی طرف سے متعین کردہ کام کرنا اسلامی نقطہ نظر سے کیسا ہے؟

سوال نمبر:1718
کسی انٹرنیٹ کمپنی کے ساتھ ان کی طرف سے متعین کردہ کام کرنا اسلامی نقطہ نظر سے کیسا ہے؟

  • سائل: اصغرمقام: اٹک، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 11 مئی 2012ء

زمرہ: جدید فقہی مسائل  |  خرید و فروخت (بیع و شراء، تجارت)  |  شرائط خریدو فروخت

جواب:

اس کے بارے میں ہمیں معلوم نہیں کہ کام کس نوعیت کا ہے؟ کیونکہ کام اچھا بھی ہو سکتا ہے برا بھی۔ اگر تو کام غیر شرعی ہو گا تو وہ جائز نہیں ہے اور اگر کام اچھا ہے تو جائز ہے۔ انٹرنیٹ کوئی غلط چیز نہیں ہے اس کا استعمال اچھا ہو گا تو جائز ہے۔ استعمال برا ہو گا تو جائز نہیں ہے۔ یہ آپ کو اختیار ہے کہ آپ کون سا راستہ اپناتے ہیں۔ جس طرح روپیہ پیسہ کوئی غلط چیز نہیں ہے۔ اس سے آپ شراب بھی خرید سکتے ہیں اور مسجد بھی بنوا سکتے ہیں۔ فحاشی کے اڈے بھی بنوا سکتے ہیں اور تعلیمی اور تربیتی مراکز بھی۔ اس لئے کمپنی کا کام اگر تو اچھا ہے جائز ہے اگر وہ کام برا ہے تو جائز نہیں ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟