کیا سود کا پیسہ مسجد کو دیا جاسکتا ہے؟

سوال نمبر:1576
السلام علیکم مفتی صاحب، کیا بنک سے ملنے والا سود کا پیسہ مسجد کو دیا جاسکتا ہے؟ مسجد کے علاوہ اور کن مقاصد کے لیے سود کا پیسہ استمعال کیا جا سکتا ہے؟

  • سائل: یاور اقبالمقام: فیصل آباد
  • تاریخ اشاعت: 02 اپریل 2012ء

زمرہ: سود   |   مسجد کے احکام و آداب

جواب:

سود کا پیسہ مسجد کو دیا جا سکتا ہے، اس کے علاوہ کسی بھی فلاحی کام کے لیے بھی دے سکتے ہیں۔ لیکن اس کا ثواب نہیں ملے گا۔ البتہ کسی دوسرے کا بھلا ہو جائے گا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟