Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - ملٹی لیول مارکیٹنگ کی شرعی حیثیت کیا ہے؟

ملٹی لیول مارکیٹنگ کی شرعی حیثیت کیا ہے؟

موضوع: جدید فقہی مسائل  |  خریدو فروخت (بیع و شراء، تجارت)   |  کتاب العاریہ (ادھار لین دین)

سوال پوچھنے والے کا نام: جواد صدیق       مقام: ملتان، پاکستان

سوال نمبر 1384:
نیٹ ورک مارکیٹنگ، چین مارکیٹنگ، ریفریل مارکیٹنگ کی شرعی حیثیت کیا ہے؟ بہت سی ملٹی لیول مارکیٹنگ کمپنیز اپنی پروڈکٹ اور سروسز ٹیٹ ورکنگ کے ذریعے سے سیل کرتی ہیں۔ یعنی ایک شخص کسی ملٹی لیول مارکیٹنگ کمپنی کی پروڈکٹ یا سروس پہلے سے ہی کسی جوائنٹ شخص کے ذریعہ سے خریدتا ہے اور نیٹ ورک پلان کا حصہ بن جاتا ہے۔ اب وہ اگر کمانا چاہتا ہے تو اپنے حلقہ احباب کو وہی پروڈکٹ یا سروس ریفر کرے گا اور کمپنی کے پلان کے مطابق اسے کمیشن ملے گا۔ کیا اس طرح کا کاروبار جائز ہے؟

جواب:

اس طرح کا کاروبار جائز ہے۔ بشرطیکہ اس قسم کے نیٹ ورک اور چین میں دھوکہ یا فراڈ نہ ہو۔ ہر شخص کو اصل حقیقت سے آگاہ کیا جائے، کمیشن طے شدہ تناسب کے مطابق ہو۔ کسی بھی دھوکہ یا فراڈ کی صورت میں کمپنی اس شخص کو تاوان دینے کی ذمہ داری ہوگی۔ اگر اس کے برعکس ہو یعنی دھوکہ فراڈ سے افرادی قوت کو بڑھایا جائے، کاروبار کی اصل حقیقت پوشیدہ رکھی جائے، جس کا بعد میں انکشاف ہو اور فتنہ فساد کا خطرہ ہوتو ایسی صورت میں اس طرح کا کاروبار ناجائز ہوگا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-01-16


Your Comments