Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا چھٹی کے دن کا معاوضہ نہ دینا جائز ہے؟

کیا چھٹی کے دن کا معاوضہ نہ دینا جائز ہے؟

موضوع: خریدو فروخت (بیع و شراء، تجارت)   |  متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: بلال انور       مقام: راولپنڈی

سوال نمبر 1323:
کیا چھٹی کے دن کا معاوضہ نہ دینا جائز ہے؟

جواب:

دونوں کے درمیان یہ معاہدہ ہے، یعنی کام کرنے والے اور کمپنی کے درمیان، انسان بزنس میں جو معاہدہ کرے اس پر عمل کرنا ضروری ہے تاکہ آپس میں فتنہ و فساد نہ پھیلے۔ چھٹی کے دن معاوضہ دینا یا نہ دینا دونوں چیزیں کاروبار میں آپ کے معاہدہ پر منحصر ہیں۔ اگر معاہدہ کرتے وقت یہ طے پایا کہ چھٹی کے دن کا معاوضہ بھی دیا جائے گا تو پھر اس کا معاوضہ دینا ضروری ہے، وگرنہ معاوضہ ادا نہ کرنے کی صورت میں ناحق اور باطل طریقے سے دوسرے کا مال کھایا جائے گا، جو شرعاً حرام ہے۔ اگر معاہدہ میں یہ طے پایا کہ معاوضہ نہیں دیا جائے گا تو پھر اس میں کوئی حلال یا حرام کی بات نہیں۔

الغرض چھٹی کے دن کے معاوضے کا تعین معاہدے کے ساتھ ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: حافظ محمد اشتیاق الازہری

تاریخ اشاعت: 2012-01-05


Your Comments