کیا سرکار دوعالم (ص) کو دنیا سے پردہ فرما جانے کے بعد دیکھنے والا صحابی کہلائے گا؟

سوال نمبر:1170

کیا کوئی بشر ہوش و حواس میں سرکار دوعالم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو دیکھ سکتا ہے؟ اور آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے ہم کلام ہو سکتا ہے؟ اگر کوئی یہ دعویٰ کرے کہ اس نے ہوش و حواس میں رہتے ہوئے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو دیکھا ہے اور آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے ہم کلام بھی ہوا ہے تو اس کے لیے از شریعت محمدی کیا حکم ہے؟ کیا یہ انسان صحابی کہلائے گا؟ یا گستاخ رسول؟

اس مسئلہ میں ہماری رہنمائی فرمائیں۔

  • سائل: محمد غوث قادریمقام: حیدر آباد، انڈیا
  • تاریخ اشاعت: 17 ستمبر 2011ء

زمرہ: خواب اور بشارات

جواب:

حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے وصال فرما جانے کے بعد آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو حالت خواب یا بیداری میں جسم مثالی سے دیکھنا ممکن ہے، لیکن اس سے کوئی شخص صحابی نہیں بن سکتا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟