وضو کے لیے مسواک کرنا کیسا ہے؟ اگر بھول جائے تو کیا حکم ہو گا؟

سوال نمبر:1141
میں اکثر وضو کرتے وقت مسواک کرنا بھول جاتا ہوں یا وضو کے دوران یاد آ جاتا ہے۔ سوال یہ ہے کہ مکمل وضو کرنے کے بعد فقط مسواک کرنا ہی کافی ہے یا کہ مسواک کر کے دوبارہ سے وضو کیا جائے؟

  • سائل: عبداللہ خانمقام: کراچی - پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 17 ستمبر 2011ء

زمرہ: وضوء

جواب:

حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم  کا فرمان عالی شان ہے جسے حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں :

قال رسول الله صلی الله عليه وآله وسلم لولا ان اشق علی امتی لامرتهم بالسواک عند کل صلوٰة.

(ترمذی، 1 : 5)

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا اگر مجھے یہ خوف نہ ہوتا کہ مسواک کرنا امت پر دشوار ہوگا تو میں ہر نماز کے لیے یعنی ہر وضو کے لیے مسواک کا حکم دیتا۔

لہذا وضو میں مسواک کرنا سنت اور ثواب کا باعث ہے، اگر مسواک نہ ہو تا شہادت والی انگلی مسواک کی جگہ استعمال کر لیں۔ اگر وضو کرتے ہوئے شروع میں مسواک بھول جائے اور فراغت سے پہلے یاد آجائے تو بعد میں کر لیں لیکن مسواک کرنے سے خون نکلا تو وضو دوبارہ کرنا پڑے گا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟
  • مزارات پر پھول چڑھانے اور چراغاں کرنے کا کیا حکم ہے؟