Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - اگر کوئی شخص حج تمتع کے دوران سعی نہ کر سکے تو اس کے لیے کیا حکم ہے؟

اگر کوئی شخص حج تمتع کے دوران سعی نہ کر سکے تو اس کے لیے کیا حکم ہے؟

موضوع: حج تمتع   |  وظائف

سوال پوچھنے والے کا نام: محسن ندیم       مقام: سعودی عربیہ

سوال نمبر 1016:
اگر‌کوئی شخص حج تمتع کر رہا تھا اور طواف زیارت کے بعد سعی نہ کر سکا تو اس کے لیے کیا حکم ہے۔ اگر وہ حج کے ایام کے بعد حج کی نیت سے سعی کر لے تو کیا حکم ہوگا۔ جزاک اللہ خیرا

جواب:
فتاوی عالمگیریہ میں لکھا ہے :

و من ترک السعی بين الصفا والمروة فعليه دم و حجه تام.

جس نے سعی نہیں کی اس پر دم واجب ہے اور اس کا حج مکمل ہو گیا۔

ولو سعیٰ ما حل و جامع و کذا بعد الاشهر.

اگر اس نے حلال ہونے کے بعد سعی کی یا کئی مہینوں کے بعد کی تب بھی درست ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: صاحبزادہ بدر عالم جان

تاریخ اشاعت: 2011-05-27


Your Comments