Fatwa Online

کیا عمرہ کی نیت سے احرام باندھنے کے بعد بغیر عمرہ کیے احرام کھولنے پر کفارہ ہے؟

سوال نمبر:5185

ایک شخص نے احرام باندھا اور احرام کی نیت بھی کر لی فلائٹ دو دن لیٹ تھی وہ شخص گھر آ گیا اور سلے ہوئے کپڑے پہن لیے۔ حکم شرع بیان فرمائیں.بینوا و توجروا

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد ریحان قادری

  • مقام: لاہور
  • تاریخ اشاعت: 31 مارچ 2019ء

موضوع:احرام کے احکام  |  عمرہ کے احکام و مسائل

جواب:

قرآنِ مجید میں اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے:

وَأَتِمُّواْ الْحَجَّ وَالْعُمْرَةَ لِلّهِ فَإِنْ أُحْصِرْتُمْ فَمَا اسْتَيْسَرَ مِنَ الْهَدْيِ.

اور حج اور عمرہ (کے مناسک) اﷲ کے لئے مکمل کرو، پھر اگر تم (راستے میں) روک لئے جاؤ تو جو قربانی بھی میسر آئے (کرنے کے لئے بھیج دو)۔

البقرة، 2: 196

سوال میں مذکور شخص نے چونکہ احرام باندھ کر طواف کیے بغیر اسے کھول کر سلے ہوئے کپڑے پہن لیے ہیں‘ اس لیے اس پر ایک بکرا دم لازم ہے۔ یہ مکہ مکرمہ میں بکرا قربان کرے گا۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:محمد شبیر قادری

Print Date : 07 December, 2019 06:08:49 AM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/5185/