Fatwa Online

دھوکہ دہی سے کیے گئے نکاح کا کیا حکم ہے؟

سوال نمبر:4618

کیا فرماتے ہیں مفتیان کرام مسئلہ ذیل کے بارے میں کہ زید کے ساتھ دھوکہ کیا گیا اس طور پر کہ لڑکی کوئی دوسری دکھائی گئی لیکن نکاح کسی دوسری لڑکی سے کردیا اس طرح کے دھوکہ کا شریعت میں کیا وعید ہے؟ کیا زید کو کوئی شرعی حق حاصل ہے؟

سوال پوچھنے والے کا نام: فیاض احمد

  • مقام: ہندوستان
  • تاریخ اشاعت: 19 جنوری 2018ء

موضوع:نکاح

جواب:

غلط بیانی اور دھوکہ بازی سے کیا ہوا نکاح سرے سے منعقد ہی نہیں ہوتا۔ نکاح کے انعقاد کے لیے متعین لڑکے اور متعین لڑکی کی رضامندی سے ایجاب و قبول ضروری ہے۔ جو لوگ ایسی دھوکہ دہی میں ملوث ہیں قرآنی نص کے مطابق وہ خدا تعالیٰ کے لعنت کے مستحق ہیں۔ ایسے لوگوں کے خلاف قانونی چارہ جوئی کی جاسکتی ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:محمد شبیر قادری

Print Date : 02 December, 2020 09:09:06 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/4618/