Fatwa Online

آذان و اقامت میں تکبیر کا تلفظ کیا ہے؟

سوال نمبر:3463

آذان و اقامت کی تکبیر یعنی اللہ اکبر اللہ اکبر کی ’’راء‘‘ کے ضمہ کو اسمِ جلالت کے لام سے ملا کر پڑھنا مطابق سنت ہے یا خلافِ سنت؟ دلائل کے ساتھ جواب عطا فرمائیں۔۔

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد اظہارالنبی حسینی

  • مقام: گجرات، الہند
  • تاریخ اشاعت: 18 جنوری 2015ء

موضوع:آذان  |  اقامت

جواب:

’’اکبر‘‘ کی ’’راء‘‘ کو اسمِ جلالت ’’اللہ‘‘ کے ’’لام‘‘ کے ساتھ ملا کر پڑھنا جائز ہے۔ عربی کا قاعدہ ہے کہ جب کسی لفظ کے شروع میں ہمزہ وصلی ہو تو اس کو ماقبل کے ساتھ ملانے سے ہمزہ وصلی گر جاتا ہے۔ اسمِ جلالت کے شروع میں بھی چونکہ ہمزہ وصلی ہے، ہمزہ قطعی نہیں ہے اس لیے جب ماقبل سے ملائیں گے تو یہ گر جائے گا، اور ما قبل کا آخری حرف ’’راء‘‘ اسمِ جلالت کے ’’لام‘‘ کے ساتھ مل جائے گا۔

لہٰذا عربی زبان کی گرائمر کی رو سے آذان و اقامت میں اس طرح پڑھنا جائز ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:عبدالقیوم ہزاروی

Print Date : 21 January, 2020 10:02:39 AM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/3463/