Fatwa Online

حالت غصہ کو مشروط قرار دینے والے شخص کی طلاق کی شرعی حیثیت کیا ہوگی؟

سوال نمبر:2558

السلام علیکم میرا سوال یہ ہے کہ اگر ایک شخص اپنی بیوی سے کہتا ہے کہ اگر میں‌ تمہیں غصے میں‌ کچھ کہوں تو اسے کالعدم قرار دیا جائے۔ یہ شخص اپنی زندگی میں‌ اپنی بیوی کو طلاق دیتا ہے۔ تب اس طلاق کی شرعی حیثیت کیا ہو گی؟

سوال پوچھنے والے کا نام: عمران سعید

  • مقام: لاہور، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 06 مئی 2013ء

موضوع:طلاق   |  طلاق

جواب:

اگر واقعی آپ نے طلاق انتہائی غصے کی حالت میں دی ہے تو طلاق واقع نہیں ہو گی۔

مزید مطالعہ کے لیے یہاں کلک کریں۔
کیا انتہائی غصہ میں طلاق واقع ہو جاتی ہے؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:عبدالقیوم ہزاروی

Print Date : 21 November, 2019 05:16:47 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/2558/