Fatwa Online

عبادت کا معنی کیا ہے؟

سوال نمبر:247

عبادت کا معنی کیا ہے؟

سوال پوچھنے والے کا نام:

  • تاریخ اشاعت: 22 جنوری 2011ء

موضوع:عبادات  |  عبادات  |  عبادات  |  عبادات  |  عبادات  |  عبادات

جواب:

عبادت عربی زبان کے لفظ ’’عبد‘‘ سے مشتق ہے اور اس کا معنی آخری درجے کی عاجزی و انکساری ہے۔

امام راغب اصفہانی بیان کرتے ہیں :

العبادةُ أَبْلَغُ مِنْهَا لِأَنَّهَا غَايَةُ التَّذُلَّلِ.

’’عبادت عاجزی و فروتنی کی انتہا کا نام ہے۔‘‘

 راغب اصفهانی، المفردات : 319

عبادت عاجزی و تعظیم کی آخری حد کا نام ہے آخری حد کی تعظیم کا اظہار صرف اُسی ہستی کے لئے رَوا ہے جو معبودِ برحق ہے۔

شیخ الاسلام پروفیسر ڈاکٹر محمد طاہرالقادری، تفسیر منہاج القرآن میں عبادت کا مفہوم بیان کرتے ہوئے لکھتے ہیں :

’’عبادت، صرف ایسے فعل کا نام ہے جو کسی کی نسبت معبود ہونے کا اعتقاد رکھتے ہوئے اس کے لیے تعظیم، عاجزی اور فروتنی کے اظہار کی خاطر صادر ہو۔‘‘

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

Print Date : 15 December, 2019 10:45:20 AM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/247/