Fatwa Online

کیا غیر محرم سے ہاتھ ملانا جائز ہے؟

سوال نمبر:2166

السلام علیکم کیا غیر محرم سے ہاتھ ملانا جائز ہے؟ انٹرنیٹ پر ایک عالم دین کی تصویر موجود ہے، جس میں وہ ایک خاتون سے ہاتھ ملا رہے ہیں۔ جبکہ ایک حدیث غالبا ابو داؤد شریف کی نظر سے گزری جس میں حضور صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے خواتین سے ہاتھ ملانے سے منع فرمایا ہے۔ رہنمائی فرمائیں۔

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد عرفان یوسف

  • مقام: راولپنڈی
  • تاریخ اشاعت: 16 اکتوبر 2012ء

موضوع:معاشرت

جواب:

غیر محرم سے ہاتھ ملانا جائز نہیں ہے۔ آپ نے جس عالم دین کو ہاتھ ملاتے ہوئے دیکھا ہے، ہو سکتا ہے کہ ایسا حقیقتاً ہوا ہی نہ ہو اور وہ تصویر آج کے اس جدید دور میں کمپیوٹر کے ذریعے سے بنائی گئی ہو، یا ہو سکتا ہے کہ ایسا کسی حاسد نے پروپیگنڈا کے طور پر کیا ہو اور یہ بھی عین ممکن ہے کہ ان صاحب کا ذاتی ایسا کوئی ارادہ نہ ہو اور ایسا محض اتفاقاً، خطاً اور غیر ارادی طور پر ہوا ہو۔ ایسا فعل محض کسی اتفاق کی بنا پر یا غیر ارادی طور پر سرزد ہو جائےتو یہ گناہ نہیں ہوتا۔ قرآن پاک میں ہے :

رَبَّنَا لاَ تُؤَاخِذْنَا إِن نَّسِينَا أَوْ أَخْطَأْنَا.

(الْبَقَرَة ، 2 : 286)

’’اے ہمارے رب! اگر ہم بھول جائیں یا خطا کر بیٹھیں تو ہماری گرفت نہ فرما‘‘۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:عبدالقیوم ہزاروی

Print Date : 17 September, 2021 12:33:25 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/2166/