Fatwa Online

کیا مردے کے پاس غسل اور کفن سے قبل پڑھائی کرناجائز ہے؟

سوال نمبر:1571

کیا مردے کے پاس غسل اور کفن سے قبل پڑھائی کرناجائز ہے؟

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد ہادی

  • مقام: گجرات
  • تاریخ اشاعت: 02 اپریل 2012ء

موضوع:احکام میت

جواب:

جی ہاں، مردے کے پاس غسل اور کفن سے قبل پڑھائی کرنا جائز ہے۔ اس میں کوئی حرج نہیں۔ اس کے علاوہ کسی بھی وقت مردے کے پاس پڑھائی کرنا جائز ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:حافظ محمد اشتیاق الازہری

Print Date : 11 April, 2021 06:28:55 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/1571/