Fatwa Online

اگر گاہک رضامندی سے مہنگی چیز خرید لے تو کیا یہ جائز ہے؟

سوال نمبر:1198

ایک چیز بازار میں مختلف ریٹ پر بک رہی ہے۔ اگر کوئی گاہک رضامندی سے مہنگی چیز خرید لے تو کیا یہ جائز ہے؟

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد اسماعیل

  • مقام: لاہور، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 08 ستمبر 2011ء

موضوع:خرید و فروخت (بیع و شراء، تجارت)

جواب:

زمیندار حضرات کھاد ڈیلروں سے جس ریٹ پر لیتے ہیں یہ بھی بیع کی ایک صورت ہے۔ بیع کی تعریف یہ ہے کہ

البيع مبادله المال بالمال بالتراضی.

(کنز الدقائق)

مال کے بدلے میں مال باہمی رضا مندی کے ساتھ دینے کو بیع کہتے ہیں۔

اور بازار میں ایسا ہوتا ہے کہ ایک چیز مختلف قسموں کی قیمت پر بک رہی ہوتی ہے۔ کہیں مہنگی کہیں سستی۔ اگر گاہک رضامندی سے مہنگی چیز خرید لے تو یہ جائز ہے۔ اسی طرح کھاد ڈیلر جو کھاد مہنگا کر کے بیچ دیں اور لینے والا بخوشی لے لے تو یہ جائز ہے۔ اس میں سود وغیرہ نہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:عبدالقیوم ہزاروی

Print Date : 12 November, 2019 02:56:37 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/1198/