Fatwa Online

کیا کوئی شخص اپنی زندگی میں‌ وراثت کی تقسیم کر سکتا ہے؟

سوال نمبر:1000

کیا کوئی شخص اپنی زندگی میں‌ وراثت کی تقسیم کر سکتا ہے؟

سوال پوچھنے والے کا نام: عبدالطیف

  • مقام: گجرات، پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 21 مئی 2011ء

موضوع:تقسیمِ وراثت

جواب:
اگر والد نے اپنی زندگی میں یہ تقسیم کی ہے تو یہ جائز ہے اس لیے کہ وہ مالک ہے اس کو زندگی میں حق حاصل ہے کہ جس کو جتنا مرضی دے لیکن کسی بیٹی یا بیٹے کے ساتھ ظلم نہ ہو۔

مرنے  کے بعد وراثت کے احکام جاری ہونگے اور اس میں لڑکی کو لڑکے کی نسبت آدھا حصہ ملتا ہے۔ چونکہ اس نے زندگی میں وراثت کی تقسیم خود کی تھی اس پر اعتراض نہیں لیکن بہتر یہ ہے کہ کبھی بھی زندگی میں وراثت تقسیم نہیں چاہیے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی:عبدالقیوم ہزاروی

Print Date : 08 December, 2022 05:53:31 PM

Taken From : https://www.thefatwa.com/urdu/questionID/1000/