کیا سوتلی ماں کے ساتھ سفرِ حج کرنا جائز ہے؟

سوال نمبر:5006
السلام علیکم! سوتلی ماں کے ساتھ حج کرنا کیسا ہے؟

  • سائل: محمد قاسممقام: پاکستان
  • تاریخ اشاعت: 05 ستمبر 2018ء

زمرہ: حج

جواب:

سوتیلی ماں یعنی باپ کی منکوحہ محرم ہوتی ہے اس لیے اس کے ساتھ سفرِ حج کرنا جائز ہے۔

اگر لڑکا لے پالک ہے اور عورت منہ بولی ماں ہے‘ اور ان کے دونوں کے درمیان کوئی محرم رشتہ بھی نہیں ہے تو یہ دونوں اکیلے حج پر نہیں جاسکتے۔ اس صورت میں یہ کسی حج گروپ کے ساتھ‘ جس میں دیگر خواتین و حضرات بھی شامل ہوں‘ سفرِ حج کریں گے۔ مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

کیا خواتین بغیر محرم کے عمرہ و زیارات کے سفر پر جاسکتی ہیں؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

اہم سوالات
  • بٹ کوئن کی ٹریڈنگ کا کیا حکم ہے؟
  • کاروباری شراکت کے اسلامی اصول کیا ہیں؟
  • قطع تعلقی کرنے والے رشتے داروں سے صلہ رحمی کا کیا حکم ہے؟