Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا چوری کی بجلی سے بننے والا کھانا حلال ہے؟

کیا چوری کی بجلی سے بننے والا کھانا حلال ہے؟

موضوع: سرقہ (چوری)

سوال پوچھنے والے کا نام: فواد علی       مقام: پشاور، خیبر پختونخواہ

سوال نمبر 4632:
السلام علیکم! میرا سوال یہ ہے کہ جس طرح بہت سے عوام بجلی چوری کرتے ہیں اور اس دوران وہ اس بجلی سے وضو اور خوراک کے لیے پانی گرم کرتے ہیں۔ تو اس پانی سے وضو جائز ہے اور اگر یہ پانی خوراک کی چیزوں میں استمعال ہو تو خوراک کا کیا بیان ہے؟ حرام ہے یا نہیں؟

جواب:

بجلی چوری کرنا غیر اخلاقی، حرام اور قانوناً جرم ہے۔ ایسا کرنے والا خدا تعالیٰ کی نظر میں گنہگار اور ملکی قانون کی نگاہ میں مجرم ہے اور اپنے عمل کا ذمہ دار ہے۔ تاہم جو شخص اس چوری کے بارے میں نہیں‌ جانتا اس کے لیے اس سے بننے والا کھانا جائز ہے اور اس سے کیا گیا وضو بھی درست ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2018-01-06


Your Comments