Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا دورانِ ڈیوٹی کام چھوڑ کر نماز ادا کرنا درست ہے؟

کیا دورانِ ڈیوٹی کام چھوڑ کر نماز ادا کرنا درست ہے؟

موضوع: متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: محمد عمران       مقام: کراچی

سوال نمبر 4603:
السلام علیکم! میں ایک سیکیورٹی کمپنی میں کام کرتا ہوں۔ کیا دوران ڈیوٹی چھوڑ کر نماز پڑھنا درست ہے؟

جواب:

ہر ادارے میں‌ کھانے پینے اور نماز کے لیے وقفہ (Break) دیا جاتا ہے۔ اس لیے آپ وقفے میں نماز ادا کریں یا پھر متبادل بندوبست کر کے نماز ادا کریں۔ اپنے انچارج کے ساتھ طے کریں کہ نماز کے لیے وقفہ دیا جائے۔ ذمہ داری (Duty) چھوڑ کر نماز پڑھنا درست نہیں ہے۔ اگر وقت پر ادا نہ کر سکیں بعد میں قضا پڑھ لیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2018-01-02


Your Comments