Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
  وطن سے محبت کی شرعی حیثیت کیا ہے؟ 
فتویٰ آن لائن - کن اوقات میں نماز پڑھنا جائز نہیں؟

کن اوقات میں نماز پڑھنا جائز نہیں؟

موضوع: عبادات  |  نماز

سوال نمبر 459:
کن اوقات میں نماز پڑھنا جائز نہیں؟

جواب:

تین اوقات ایسے ہیں جن میں نماز پڑھنا جائز نہیں :

  1. سورج نکلتے وقت۔
  2. استواء (دوپہر کے وقت جب سورج نہ عروج پر ہو نہ زوال پر بلکہ ٹھہرا ہوا ہو)۔
  3. سورج ڈوبتے وقت۔

مندرجہ بالا اوقات میں نماز کی ممانعت حدیث مبارکہ سے ثابت ہے۔ حضرت عقبہ بن عامر رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ہم لوگوں کو تین اوقات میں نماز پڑھنے یا مُردوں کو دفن کرنے (مراد نمازِ جنازہ پڑھنے) سے منع فرمایا ہے :

  1. جب سورج نکل رہا ہو، یہاں تک کہ نکل کر بلند ہو جائے۔
  2. جب زوال کا وقت ہو یہاں تک کہ سورج ڈھل جائے۔
  3. جب سورج غروب ہو رہا ہو یہاں تک کہ غروب ہو جائے۔

مسلم، الصحيح، کتاب صلاة المسافرين وقصرها، باب الاوقات التی نهی عن الصلاة فيها، 1 : 568، 569، رقم : 831

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔


Your Comments