Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا سوتیلی ماں کی بہن سے نکاح جائز ہے؟

کیا سوتیلی ماں کی بہن سے نکاح جائز ہے؟

موضوع: محرمات نکاح

سوال پوچھنے والے کا نام: عقیل احمد شفیق       مقام: مالیگاؤں، مہراشٹرا، انڈیا

سوال نمبر 4530:
کیا میں اپنی سوتیلی ماں کی بہن یعنی کہ خالہ سے نکاح کر سکتا ہوں

جواب:

اگر سوتیلی ماں سے رضاعت (دودھ پینا) ثابت نہیں ہے تو اس کی بہن شریعت کی نظر میں آپ کی خالہ نہیں ہے‘ اس سے نکاح جائز ہے۔ جس عورت سے نکاح جائز نہیں وہ حقیقی یا رضاعی ماں کی سگی بہن یا ماں شریک بہن یا باپ شریک بہن یا دودھ شریک بہن ہے۔ شریعت کی نگاہ میں انسان پر اس کے باپ کی بیوی ہونے کی وجہ سے صرف سوتیلی ماں حرام ہوتی ہے، سوتیلی ماں کی ماں یا بہن وغیرہ حرام نہیں ہوتی۔ اس لیے اگر آپ نے شیرخوارگی کی عمر میں سوتیلی ماں کا دودھ نہیں پیا تو اس کی بہن سے نکاح جائز ہے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-11-20


Your Comments