Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - نکاح‌ سے پہلے طلاق کی دھمکی دینے سے طلاق کا کیا حکم ہے؟

نکاح‌ سے پہلے طلاق کی دھمکی دینے سے طلاق کا کیا حکم ہے؟

موضوع: طلاق   |  تعلیق طلاق

سوال پوچھنے والے کا نام: عباس جہانزیب       مقام: دبئی

سوال نمبر 4499:
نکاح سے پہلے لڑکے اور لڑکی کی کسی بات پر بحث ہو رہی تھی۔ لڑکے نے کہا ’ایسا نہ ہو کہ نکاح‌ کے بعد ہماری طلاق ہو جائے‘ لڑکی نے جواب دیا نہیں‌ ہوسکتی۔ پھر لڑکے نے کہا ’اگر یہی حالات رہے تو ہو بھی سکتی ہے‘ یا کہا کہ ’ہو جائے گی‘۔ سوال یہ ہے کہ کیا شادی کے بعد ان الفاظ کی وجہ سے کوئی طلاق واقع ہوئی ہے؟

جواب:

آپ کے یہ الفاظ لغو ہیں، ان سے کوئی طلاق نہیں‌ ہوئی۔ لیکن اس طرح کی شرائط اور لغویات مستقبل میں‌ بننے والے رشتوں کو کمزور کرتے ہیں، اس لیے ان سے اجتناب کیا جائے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-11-02


Your Comments