Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا میاں‌ بیوی گھر میں باجماعت نماز ادا کر سکتے ہیں؟

کیا میاں‌ بیوی گھر میں باجماعت نماز ادا کر سکتے ہیں؟

موضوع: نماز  |  نماز با جماعت   |  با جماعت نماز کے احکام

سوال پوچھنے والے کا نام: عثمان اعوان       مقام: لاہور

سوال نمبر 4318:
کیا میاں‌ بیوی گھر میں باجماعت نماز ادا کر سکتے ہیں؟

جواب:

مرد حضرات کے لیے مسجد میں باجماعت نماز ادا کرنا زیادہ افضل ہے، بغیر کسی عذرِ شرعی کے مرد کا گھر میں نماز پڑھنا ناپسندیدہ ہے۔

اگر کسی معقول عذر کی وجہ سے گھر میں نماز ادا کرتے ہیں تو میاں بیوی باجماعت نماز ادا کرسکتے ہیں۔ اس کی صورت یہ ہوگی کہ شوہر امامت کرے گا اور بیوی اس کی اقداء میں بائیں جانب تھوڑا سا پیچھے کھڑی ہوگی۔ اور یہاں پر اقامت شوہر بھی کہہ سکتا اور بیوی بھی کیونکہ کوئی غیر مرد موجود نہیں ہے۔ مزید وضاحت کے لیے ملاحظہ کیجیے:

کیا صرف ایک مرد اور اس کی بیوی باجماعت نماز ادا کرسکتے ہیں؟

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2017-07-27


Your Comments