Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
  Three Day Dawra Uloom-ul-Hadith by Shaykh-ul-Islam Dr Muhammad Tahir-ul-Qadri 
فتویٰ آن لائن - آن لائن اشتہارات دیکھنے سے ہونے والی آمدن کا کیا حکم ہے؟

آن لائن اشتہارات دیکھنے سے ہونے والی آمدن کا کیا حکم ہے؟

موضوع: جدید فقہی مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: محمدفیاض       مقام: پاکستان

سوال نمبر 3917:
السلام علیکم! مفتی صاحب میں‌ آن لائن کام کرتا ہوں، جس میں‌ 50 ڈالر کا ایڈپیک خریدنے کے بعد ایڈ کمپنی اس کے بدلے اگلے پچاس دنوں‌ کے اندر مجھے 55 ڈالر دیتے ہیں۔ کمپنی پالیسی کے مطابق ضروری نہیں‌ ہے کہ مجھے 55 ڈالر ہی ملیں‌ اس سے کم یا زیادہ بھی مل سکتے ہیں۔ اس کے لیے مجھے روزانہ دس (10) ویب سائٹس پر جا کر اشتہار دیکھنا ہوں‌ گے، اگر نا دیکھوں‌ تو کمپنی مجھے کچھ نہیں‌ دے گی۔ میرا سوال یہ ہے کہ کیا اس طرح‌ کی آمدن جائز ہے؟

جواب:

اشتہارات سے ہونے والی آمدن کی حلت و حرمت کا انحصار اس بات پر ہے کہ اشتہار کس شے کا ہے؟ جس شے کی تشہیر کی جا رہی ہے حلت و حرمت کے حوالے سے اس کی اپنی حیثیت کیا ہے؟ اگر اشتہارات ایسی مصنوعات کے ہیں جن کا استعال اسلام میں جائز ہے تو اس سے ہونے والی آمدن بھی جائز اور حلال ہے، اور اگر اشتہارات ممنوعہ اشیاء کے ہیں جیسے: شراب، سور کا گوشت یا فحش فلمیں وغیرہ یا پھر فحش و بیہودہ اشتہارات ہیں تو ان سے حاصل کی جانے والی آمدن بھی جائز نہیں۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2016-05-28


Your Comments