Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
  Three Day Dawra Uloom-ul-Hadith by Shaykh-ul-Islam Dr Muhammad Tahir-ul-Qadri 
فتویٰ آن لائن - کیا ’میرے سوہنے اللہ‘ کہنا آدابِ خداوندی کے خلاف ہے؟

کیا ’میرے سوہنے اللہ‘ کہنا آدابِ خداوندی کے خلاف ہے؟

موضوع: متفرق مسائل

سوال پوچھنے والے کا نام: لیاقت علی اعوان       مقام: اوکاڑہ

سوال نمبر 3529:

السلام علیکم! کیا دعا کے دوران اللہ تعالٰی کو مخاطب کرتے ہوئے ایسے کہنا جائز ہے کہ:

اے میرے سوہنے اللہ!تجھ سے سوہنا دنیا میں کوئی ہے ہی نہیں۔ اے اللہ میاں! اے سوہنیا! وغیرہ وغیرہ کیا لفظ سوہنا یا میاں مادی یا کثیف نہیں ہیں؟ جبکہ اللہ تعالٰی تو مادیت یا کثافت سے پاک ہے۔

راہنمائی فرما دیجیے

شکریہ

جواب:

یہ سادہ لوگوں کے پیار، محبت اور ادب کے انداز ہیں۔ ایسے لوگ مادیت اور کثافت جیسی مباحث سے لاعلم ہوتے ہیں۔ وہ اللہ تعالیٰ کو اپنے پیار بھرے انداز میں پکارتے ہیں، ان پر کفر کے فتوے لگانے سے گریز کرنا چاہیے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 0000-00-00


Your Comments