Fatwa Online Durood-e-Minhaj
Home Latest Questions Most Visited Ask Scholar
   
فتویٰ آن لائن - کیا امام، مسجد کے چندہ سے آنے جانے کے اخراجات لے سکتا ہے؟

کیا امام، مسجد کے چندہ سے آنے جانے کے اخراجات لے سکتا ہے؟

موضوع: امامت   |  معاملات

سوال پوچھنے والے کا نام: کامران ستی       مقام: واہ کینٹ

سوال نمبر 3344:
السلام علیکم! میں ایک مسجد میں امامت کی ذمہ داری ادا کرہاہوں۔ اہلِ محلہ کسی قسم کا اعزازیہ یا تنخواہ نہیں دیتے۔ کیا میں مسجد کے چندہ سے آنے جانے کے اخراجات اداء کرسکتا ہوں؟

جواب:

اس مسئلہ کا سب سے بہترین حل یہ ہے کہ آپ اہلِ محلہ سے اپنے اعزازیہ یا تنخواہ کا مطالبہ کرلیں، کیونکہ آپ تن دہی سے یہ فریضہ انجام دے رہے ہیں تو اعزازیہ طے کرنے میں حرج نہیں۔

اگر آپ اعزازیہ طے نہیں کرنا چاہتے اور مسجد کے چندہ سے صرف آنے جانے کا خرچ لینا چاہتے ہیں تو بھی یہ بات اہلِ محلہ کے علم میں لانا ضروری ہے۔ شرعی طور پر ایسا کرنے میں کوئی ممانعت نہیں مگر اس کا حساب کتاب رکھنا ضروری ہے۔ تاکہ کسی بھی طرح کی خوردبرد نہ ہوسکے، اور نہ ہی آپ کو مستقبل میں اس حوالے سے کسی پریشانی کا سامنا کرنا پڑے۔

واللہ و رسولہ اعلم بالصواب۔

مفتی: محمد شبیر قادری

تاریخ اشاعت: 2014-11-13


Your Comments